131

ماہواری ایام میں کھانا پکانے والی خواتین اگلے جنم میں کتیا ہونگی ہندو پنڈت

 بھارتی ریاست گجرات کے ایک ہندو پنڈت نے دعویٰ کیا ہے کہ ماہواری کی حالت میں اپنے شوہر کیلئے کھانا پکانے والی خواتین اگلے جنم میں کتیا بن کر پیدا ہوں گی اور وہ مرد جو ایسی عورت کے ہاتھ کا بنا ہوا کھانا کھاتے ہیں وہ اگلے جنم میں بیل پیدا ہوں گے۔

’سوامی کرشنا سوا روپ داس جی‘ نار نارائن دیو گڑھی کے سوامی نارائن فرقے سے تعلق رکھتے ہیں ، ان کے مندر کے تحت ایک گرلز کالج چلایا جاتا ہے جنہوں نے کچھ روز پہلے 60 لڑکیوں کے کپڑے اتروا کر ان کی ماہواری چیک کی تھی۔ اس کالج کے گرلز ہاسٹل میں قانون ہے کہ جن لڑکیوں کو ماہواری آئی ہوگی وہ دوسری لڑکیوں کے ساتھ بیٹھ کر کھانا نہیں کھائیں گی۔

سوامی داس جی نے اپنے بھاشن کے دوران کہا کہ انہیں کوئی پرواہ نہیں ہے کہ کوئی ان کے بارے میں کیا رائے رکھتا ہے لیکن وہ جو بات کہہ رہے ہیں وہ ان کے شاستروں میں لکھا ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جو خواتین اس بارے میں احتیاط نہیں کرتیں وہ گناہ کی مرتکب ہورہی ہیں، انہوں نے مردوں کو پیغام دیا کہ انہیں بھی کھانا پکانا سیکھنا چاہیے۔

ہندو پنڈت کے بھاشن کی یہ ویڈیو انٹرنیٹ پر وائرل ہوچکی ہے اور لوگ ان کے نظریات کے حوالے سے سوالات اٹھا رہے ہیں، ویڈیو ممکنہ طور پر پرانی ہے لیکن ان کے گرلز کالج میں پیش آنے والے واقعے کے بعد یہ سوشل میڈیا پر چھائی ہوئی ہے اور لوگ پنڈت کو آڑے ہاتھوں لے رہے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں