182

فیصل آباد بھاگنے والی سکھ لڑکی واپس بھارت گئی تو خفیہ ایجنسیوں نے گھیر لیا۔

بھارتی سکھ لڑکی 23سالہ منجیت کور کو بھارت پہنچتے ہی خفیہ ایجنسیوں نے گھیر لیا اور تقریباً10گھنٹے تک اس سے تفتیش کرنے کے بعد اسے ہریانہ پہنچایا۔ روزنامہ جنگ کے مطابق منجیت کور نے بتایا کہ وہ شادی شدہ ہے اور اس کے ماں باپ نے اس کی مرضی کے خلاف ایک ہندو لڑکے سے اس کی شادی کر دی تھی۔منجیت کور کا کہنا تھا کہ سوشل میڈیا پر اس کی دوستی پاکستانی نوجوان اویس مختار سے ہوئی۔دونوں نے شادی کا فیصلہ کرلیا اور وہ اسی منصوبے کے تحت کرتارپور گئی تھی۔

منجیت کور کا کہنا ہے کہ وہ اپنے ہندوشوہر کے ساتھ نہیں رہنا چاہتی جبکہ وہ اسلام قبول کر کے نئی زندگی کا آغاز کرنا چاہتی ہے۔ اس نے کہا کہ اگر اویس سے اس کی شادی نہ ہوئی تو وہ خود کشی کر لے گی۔ کرتار پور کے حکام نے اسے زبردستی بھارت واپس بھیجا۔ اس نے کہا کہ اگر اسے پاکستان کا ویزہ نہ ملا تو اس کی کوشش ہوگی کہ وہ کسی دوسرے ملک جاکر شادی کریں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں